Leave a comment

دل گرچہ یہ ناراض ہے، آؤ صاحب

غزل

خوش ہے کہ جو غمّاز ہے، آؤ صاحب
دل گرچہ یہ ناراض ہے، آؤ صاحب

Khush hay k jo ghammaz hay, Aao Saahib
Dil garche ye naraaz hay, Aao Saahib

سوچوگے تو وحشت سے نہ آپاؤگے
انجام کا آغاز ہے، آؤ صاحب

Sochogay tu wahshat say na aapaogay
Anjaam ka aghaaz hay, Aao Saahib

بہتوں نے تمھیں سوچ کے چاہا ہوگا
چاہت مری ممتاز ہے، آؤ صاحب

BohtoN nay tumhain soch k chaha hoga
Chahat meri mumtaaz hay, Aao Saahib

غصے میں محبت ہے، محبت میں نشہ
ہر راز میں اک راز ہے، آؤ صاحب

Ghussay main muhabbat hay, muhabbat main nasha
Har raaz main ik raaz hay, Aao Saahib

جو بیت گیا ہے، سو پریشاں مت ہو
حالت بڑی ناساز ہے، آؤ صاحب

Jo beet gaya hay, So pareshaN mat ho
Haalat baRi nasaaz hay, Aao Saahib

گر دل میں تمھارے بھی ہے خواہش، پھر بھی
میرے لیے اعزاز ہے، آؤ صاحب

Gar dil main tumharay bhi hay Khwahish, phir bhi
Mairay liye ezaaz hay, Aao Saahib

دنیا وہ تمھاری ہے جو دل ہے میرا
دل کی یہی آواز ہے، آؤ صاحب

Dunya wo tumhari hay jo Dil hay maira
Dil ki yahi awaaz hay, Aao Saahib

Advertisements

Comments Please

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out / Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out / Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out / Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out / Change )

Connecting to %s

%d bloggers like this: