Leave a comment

!بے چہرگی

Ye nazm FaceOff k naam say honay wale aek workshop k silsilay main kahi gayi hay.

!بے چہرگی

ہزار چہرے
ہر ایک چہرے پہ ایک چہرہ
سجا ہے ایسا
کہ جیسے سکّے کے دو رخوں میں
بٹی حقیقت
مگر یہ چہرے پہ ایک چہرہ
فسوں ہے یارو!
اور ایسے چہروں کی کیا کمی ہے!
ہر اک نگر میں ہزار چہرے
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
مری زمیں پر محبتوں کی
ہزار رنگوں میں فصلِ گل کی
ہزار صدیوں سے کھیتیاں لہلہارہی تھیں
یہ اک صدی جو عذاب بن کر
ہمارے گلشن میں آبسی ہے۔۔۔
بتاؤ مجھ کو، نمو کہاں پر ہوئی ہے اس کی
یہ کس ستارے نے اس کو جنما
کہیں پرانی کسی صدی کی
سسکتی، خوں تھوکتی، دمِ مرگ پر تڑپتی
جڑوں نے جوڑا ہے رابطہ کوئی اِس صدی سے
جو تازہ کاری کے اک فسوں سے
ہوئی ہے معنون
جس نے چہروں پہ ایک چہرہ مزید تھوپا
یہ اک اضافی
یہ ایک خونیں
یہ ایک بے درد
پتھروں جیسا سخت چہرہ
اور ایسے چہرے ہیں اب ہزاروں
ہر اک نگر میں
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
!فضا کو دیکھو
یہ کیا فسوں سے بھری نہیں ہے؟
یہاں پہ معصومیت سے کِھلواڑ کس نے کھیلا؟
یہ میں نے کھیلا
یہ تم نے کھیلا
یہ اِس نے کھیلا
یہ اُس نے کھیلا
سبھی نے مل کے یہاں پہ لوٹی ہے اس کی عصمت
کبھی زمیں کی حدود کے نام سے ہے لوٹی
کبھی کسی زن کے نرم نقش و نگار اپنے
کریہہ دانتوں سے ایسے نوچے
کہ اپنی پہچان بھول بیٹھے
کبھی تو غیرت پہ تھوک کر اپنی
بیٹیوں کے حقوق کھاکے
اور اِن سے بڑھ کر
کبھی خدا و رسول کے نام پر بھی آئی نہ شرم کوئی
خدائے برتر نے آسماں سے کُھلی ہدایت اتار دی ہے
مگر یہ مُلا، عجیب ملا
عجیب اِن کی شریعتیں ہیں
جو اِن سے کترا کے جائیں تو یہ اُتار دیں اُن کی گردنیں بھی
کبھی سیاسی، کبھی معاشی
ہیں احمقوں کے عجیب نعرے۔۔۔
جہاں پہ جس کو ذرا سا موقع بھی مل گیا ہے
وہیں پہ اُس نے
زمیں کی عصمت بھَنْبھُوڑ دی ہے
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
یہ اِس صدی کے کریہہ چہرے ہیں
جن کی تعداد ہے ہزاروں
ہر اک نگر میں
مجھے تو افسوس بس یہی ہے
کہ ہم پڑے ہیں اگر مگر میں
کبھی چھپاتے ہیں اپنا چہرہ
جو خوں سے رنگیں، کٹا پھٹا ہے
کبھی دکھاتے ہیں ایسا چہرہ
ہے جس پہ معصومیت کا پہرہ
ارے، اے لوگو۔۔۔
!عجیب لوگو
یہ کیا تماشا لگارہے ہو
یہ کیسے چہرے دکھارہے ہو
فسوں میں لپٹے
!دھواں سا چہرے
کبھی حقیقت سے بھی نگاہیں ملاؤ لوگو
کہ تم تو لاچارگی کے عالم میں
تازہ کاری کی اِس صدی میں
!بغیر چہرے کے جی رہے ہو

Be-chehragii

Har aek chehray pe aek chehra

Saja hay aesa

K jesay sikkay k do rukhoN main

Bati Haqeeqat

Magar ye chehray pe aek chehra

FusooN hay yaaro!

Aor aesay chehroN ki kia kami hay!

Har ik nagar main hazaar chehray

…………..

Meri zameen par muhabbatoN ki

Hazaar rangoN main fasl-e-gul ki

Hazaar sadyuN say khaitiaN lehlahaa rahi theeN

Ye ik sadi jo azaab ban kar

Hamaray gulshan main aabasi hay

Bataao mujh ko, Namoo kahan par hoi hay iski

Ye kis sitaray nay isko janma

Kaheen purani kisi sadi ki

Sisakti, khooN thookti, dam-e-marg par taRaptii

JaRoN nay joRa hay raabita koi is sadi say

Jo taza-kaari k ik fusooN say

Hoi hay ma’noon

Jis nay chehroN pe aek chehra mazeed thopa

Ye ik izaafi

Ye aek khooneeN

Ye aek be-dard

PattharoN jesa sakht chehra

Aor aesay chehray hain ab hazaaroN

Har ik nagar main

………………

Fiza ko dekho!

Ye kia fusooN say bhari nahi hay?

YahaN pe masoomiat say khilwaaR kis nay khaila?

Ye main nay khaila

Ye tum nay khiala

Ye is nay khaila

Ye os nay khaila

Sabhi nay mil k yahaN pe looti hay iski Ismat

Kabhi zameeN ki hudood k naam say he lootii

Kabhi kisi zan k narm naqsh-o-nigaar apnay

Kareeh dantoN say aesay nochay

K apni pehchan bhool baithay

Kabhi tu ghairat pe thook kar apni

BaitioN k huqooq khaa k

Aor in say baRh kar

Kabhi Khuda-o-rasool k naam par bhi aayi na sharm koi

Khudaaye bartar nay aasmaaN say khuli hidayat utaar di hay

Magar ye mulla, ajeeb mulla

Ajeeb in ki sharii’atain hain

Jo in say katraa k jaayeN tu ye utaar dain un ki gardanaiN bhi

Kabhi siyasi, kabhi ma’ashi

Hain ahmaqoN k ajeeb na’ray…

JahaN pe jis ko zara sa moqa bhi mil gaya hay

WaheeN pe os nay

ZameeN ki ismat bhanbhoR di hay

……………..

Ye is sadi k kareeh chehray hain

Jin ki ta’daad hay hazaaroN

Har ik nagar main

Mujhay tu afsos bus yahi hay

k hum paRay hain agar magar main

Kabhi chupatay hain apna chehra

Jo khooN say rangeeN, kata phata hay

Kabhi dikhatay hain aesa chehra

Hay jis pe masoomiat ka pehra

Aray ae logo…

Ajeeb logo!

Ye kia tamasha laga rahay ho

Ye kesay chehray dikha rahay ho

FusooN main liptay

DhuwaaN say chehray!

Kabhi haqeeqat say bhi nigaahain milaao logo

K tum tu laachaargi k aalam main

Taaza-kaari ki is sadi main

Baghair chehray k jii rahay ho!

Advertisements

Comments Please

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out / Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out / Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out / Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out / Change )

Connecting to %s

%d bloggers like this: