Leave a comment

آئینہ تمھارے اندر ہے

آئینہ تمھارے اندر ہے

عالم جبروت کا نمایندہ
جنت ارضی پر اترکر
:درشت لہجے میں کہ رہا تھا
جس دن میں نے
تم سے تمھارا سایہ چھین لیا
اس دن تمھاری روح
تمھارے جسم سے ڈر کر بھاگ جائے گی
اس لمحے میرا خوف زدہ شریر یہ جانا
کہ میرا سایہ میری روح کے لیے آئینہ ہے
جس میں وہ سرشاری کے عالم میں
ہر لمحہ اپنا عکس دیکھتی رہتی ہے
رات کی چادر تلے میری روح
پژمردہ ہوکر گناہوں کی پناہ لینے کی طرف مائل ہوتی ہے
یہ میرے جسم کی کثافت اور غلاظت سے
بے خبر رہتی ہے
جس دم میں اپنے سائے سے کھلواڑ کھیلتا ہوں
اس سمے میری روح میں جواربھاٹا اٹھتا ہے
اس کا لہجہ جس دم نرم ہوا
:اس نے کہا
!اپنےسائے کی قدر کرو

Aayina tmharay andar hay

Aalam-e-jabroot ka numayinda
Jannat-e-arzi par utar kar
Durusht lehjay main keh raha tha:
Jis din main nay
Tum say tumhara saya cheen lia
Us din tumhari rooh
Tumharay jism say dar kar bhaag jaayegi
Us lamhay maira khof-zada shareer jaana
K miara saaya mairii rooh k liye aayina hay
Jis main wo sarshari k aalam main
Har lamha apna aks dekhti rehti hay
Raat ki chaadar talay mairii rooh
Pazmurda hokar gunahoN ki panah lenay ki taraf mayil hoti hay
Ye mairay jism ki kasafat aor ghalazat say
Bay-khabar rehti hay
Jis dam main apnay saaye say khilwaaR khailta hoN
Us samay mairii rooh main jwaar-bhaata uthta hay
Us ka lehja jis dam narm hoa
Us nay kaha:
Apnay saaye ki qadr karo!

Advertisements

Comments Please

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out / Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out / Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out / Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out / Change )

Connecting to %s

%d bloggers like this: