Leave a comment

تخلیق کار مگن ہے

تخلیق کار مگن ہے

محبت کے وہ لمحے
جن کے قدموں سے تذبذب سانپ کی طرح لپٹا ہے،
تخلیق کار چاہتا ہے کہ یہ قدم تیقن کی سرزمین پر
اپنے نقوش بنائے،
کیا کم زور ارادوں کے پیچھے
کسی ہوش ربا امکان کا جنم ہوسکتا ہے،
یا محض تخلیق کار کو اپنے کینوس کے سامنے
دیر سے بیٹھے بیٹھے
کسی نئے تجریدی تجربے کی
ضرورت محسوس ہورہی ہے،
وہ اپنی آنکھوں میں بچھی ہوئی سرنگوں کے جال میں
سرکتے لہو کے تموّج کو
انتظار کی گرمی سے اچھال رہا ہے،
جب کینوس پر واٹر کلر سے اسے مزیّن کرے گا
تو محبوب کی آنکھوں سے دُم دار سیاروں جیسی
پلکوں والا اعتراف کتر لے گا،
اور صحرا کی ریت جیسی لہروں والے
ہونٹوں پر مسکان کی دیر سے سوئی
گھنٹی کو جگادے گا،
تخلیق کار کیوں جانب دار نہیں رہ سکتا،
اپنے تخیّل اور تحیّر کو مجسم کرکے
جا بہ جا عکس در عکس کیوں پھیلاتا ہے،
—اور
تخلیق کار بے نیازی سے دیر سے کینوس کے سامنے بیٹھا
اپنی یکتائی برقرار رکھ کر
کہانی کو کسی نئے زاویے سے
معکوس کرنے میں مگن ہے

Advertisements

Comments Please

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out / Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out / Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out / Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out / Change )

Connecting to %s

%d bloggers like this: